158

پاکستان زرعی تحقیقاتی کونسل نے زیتون کی چائے متعارف کرادی،پی اے آر سی اب تک 100 برانڈ بنا چکا ہے:چیئرمین پی اے آر سی ڈاکٹرمحمدعظیم

پاکستان میں زراعت اور زرعی مداخل پر تحقیق کرنے والے سب سے  بڑے سرکاری ریسرچ ادارے کے سربراہ  ڈاکٹر محمد عظیم نے ایگر و پاکستان کو خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے بتایا ہے کہ پاکستان زرعی تحقیقاتی کونسل(پی اے آر سی )اب تک مجموعی طور پر اپنے 100برانڈ متعارف کراچکا ہے، حال ہی میں دہی اور زیتون کی چائے کے برانڈز بھی متعارف کرائے گئے ہیں،ان برانڈزکو لوگوں میں خوب پزیرائی ملی ہے،انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم پاکستان عمران خان کے ویژن کے مطابق ادارے میں اصلاحات کیساتھ ساتھ اسکے فروغ کیلئے بھی دن رات کوشاں ہے،پی اے آر سی برانڈز کی مقامی سطح پر پائلٹ پراجیکٹ کے طور پر لانچنگ کے بعد دیگر ممالک کو ایکسپورٹ کرنے پر بھی غور کیا جائےگا، ہماری پراڈکٹ پر صارفین کو اعتماد ہے کیونکہ یہ پراڈکٹ حالص اجزا پر مشتمل ہیں،ان پراڈکٹس کی مارکیٹنگ اور سیلز کیلئے نجی شراکت بھی کی جائے گی جس سے ادارے کا ریونیو بھی بڑھے گا، چیئرمین پی اے آر سی ڈاکٹر محمد عظیم نے کہاکہ ہم اپنی پراڈکٹ کاآئی پی او سے ٹریڈ مارک بھی رجسٹرکرائیں گے،جس کے لیے آئی پی او سے ایم او یو سائن کرنے جا رہے ہیں،ڈاکٹر محمد عظیم خان نے کہاکہ آبادی بڑھنے کیساتھ ساتھ قابل کاشت زمین بھی کم ہو رہی ہے، سائنسدانوں کو ایسی تحقیق پر توجہ دینے کی ضرورت ہے جو پاکستان میں فی ایکڑ پیداوار میں اضافہ کرے،وزیر اعظم کے پروگرام کے تحت دالوں کی پیداوار میں اضافے کا منصوبہ شروع کیا ہے اس مرتبہ چنے کی پیداوار میں پانچ لاکھ ٹن سے اوپر اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔ٹڈی دل نے فصلوں کو بہت نقصان پہنچایا ہے، اب ہم ٹڈی دل سے کھاد بنانے کے منصوبے پر کام کررہے ہیں،اس سے کاشتکار کو بھی فائدہ ہو گا اور ٹڈی دل پر قابو پانے میں بھی مدد ملے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں